عجــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــــيب بات

1000 روپے

ہميں اتني بڑي رقم لگتي ہے جب ہم مسجد ساتھ لے کر جاتے ہيں صدقہ دينے کے ليے

مگر

بڑي معمولي رقم لگتي ہے جب ہم بازار لے کر جاتے ہيں

عجيب
کسي وزير يا بادشاہ کے دربار ميں حاضري کو خوش نصيبي اور اعزاز تصور کرتے ہيں ان کے دربار ميں ہمارےادب و احترام کي کوئي مثال نہيں ملتي

مگر
اللہ کے سامنے حاضري ہي بھاري لگتي ہے اور پھر اللہ کے دربار ميں جمائي ، سستي، اور کاہلي کي کوئي مثال نہيں ملتي

مزید آگے پڑھیں


عجيب

دو گھنٹے

ہميں بہت طويل لگتے ہيں مسجد ميں

مگر

يھي دو گھنٹے بہت قصير لگتے ہيں سينما ميں

عــــــــــــــــــــــــــــــــجيب

ايک گھنٹہ

ہميں بہت طويل لگتا ہے اللہ کي عبادت ميں

مگر

يہي ايک گھنٹہ بہت معولي لگتا ہے انٹرنٹ پر يا ٹي وي کے آگے

عــــــــــــــــــــــــــــجيب

ہميں قرآن کے دو صفحے پڑھنا بے حد مشکل لگتا ہے
مگر

اس کے برعکس

ناولز کي کتابيں پڑھنا بے حد آسان????

عــــــــــــــــــــــــجيب

ہم ميڈيا و اخبارات کي باتوں پر تصديق کرنے ميں دير نہيں کرتے
مگر

قرآن جو کہتا ہے اس پر شک و شبہات ميں پڑے ہيں

عــــــــــــــــــــــــــجيب

کيسے يک دم ہم مغرب کے تہذيب ميں رنگ جاتے ہيں اور ان کے طريقے اپنا ليتے ہيں

مگر

اپنے رسول عليه الصلاة والسلام کے طريقے (سنت) کو اپنانا گوارا نہيں !

عــــــــــــــــــــــــــجيب

ہميں دعاء کے وقت ہر بات ياد نہيں آتي

مگر

دوستوں سے گپے مارتے ہو? دنيا جہاں کي باتيں ياد آتي ہيں

؟

عجـــــــــــــــــــــــــــــــــــــيب

ہر پارٹي يہ مجمع ميں لوگو کي کثرت آگے نظر آتي ہے
مگر

مسجد ميں پہلي صف کي رغبت نظر نہيں آتي
لوگو کي کثرت آخري صف ميں نظر آتي ہے

عجـــــــــــــــــــــــــــــــــــــيب

ہميں قرآن کي دو آيتيں ياد کرنا بہت مشکل لگتاہے

مگر

گانے اور ترانے يک دم ياد کر ليتے ہيں

همارے نبي صلي اللہ عليہ وسلم نے فرمايا
“جنت ناگوار چيزوں سے گھيري گئي ہے اور جھنم خوشگوار چيزوں سے گھيري گئي ہے ”
(جو انساني نفس کو خوشگوار لگتي ہے)
رواہ مسلم

اور آپ نبي صلي اللہ عليہ وسلم نے فرمايا

“دنيا کي مٹھاس آخرت کي کڑواہٹ ہے اور دنيا کي کڑواہٹ آخرت کي مٹھاس ہے”
رواہ احمد و الحاکم

فَأَمَّا مَن طَغَى

تو جس [شخص] نے سر کشي کي ہوگي

وَآثَرَ الْحَيَاةَ الدُّنْيَا

اور دنيوي زندگي کو ترجيح دي ہوگي

فَإِنَّ الْجَحِيمَ هِيَ الْمَأْوَى

تو اس کا ٹھکانا جھنم ہي ہے
وَأَمَّا مَنْ خَافَ مَقَامَ رَبِّهِ وَنَهَى النَّفْسَ عَنِ الْهَوَى
ہاں جو شخص اپنے رب کے سامنے کہرے ہونے
سے ڈرتا رہا ہو گا اور اپنے نفس کو نفسي خواہش سے روکتا رہا ہوگا
فَإِنَّ الْجَنَّةَ هِيَ الْمَأْوَى
تو اس کا ٹھکانا جنت ہي ہے

وَلَا تَتَّبِعِ الْهَوَى فَيُضِلَّكَ عَن سَبِيلِ اللَّهِ
اور اپنے نفساني خواہش کي پيروي نہ کرو ورنہ وہ تمہيں اللہ کي راہ سے بھٹکا دے گي

آج عمل کا دن ہے حساب کا نہيں

کل حساب کا دن ہوگا عمل کا نہيں

سنا تھا ہم نے لوگوں سے ?????

محبت چيز ايسي ہے ???

چھپا? چھپ نہيں سکتي ???

يہ آنکھوں ميں چمکتي ہے ??

? يہ چہروں پر دمکتي ہے ???

دلوں تک کو رلاتي ہے ????

مگر

اگر يہ سب سچ ہے ???

تو پھر ہميں اپنے رب

سے بھلا کيسي محبت ہے

نہ آنکھوں سے جھلکتي ہے

نا چہروں پر دمکتي ہے ??

نا لہجوں ميں سلگتي ہے

نا دلوں کو آزماتي ہے

نا راتوں کو رلاتي ہے

يہ کيسي محبت ہے ???

3 thoughts on “عجـــــــــيب بات

  1. Awesome, excellent May Allah bless you and your family with his special treasures of blessings and keep you in his beloveds in all worlds

  2. MASHAA ALLAH BOHAT ACHHA LIKAH HAI ALLAH HUM SAB KO PARHNIY SE ZEYADA AMAL KARNEY WALA BANAI AAMEEN ISEE TARAH KE PEGHAMAT MAZEED TEHRIR FARMAIN JAZAKALLAH

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *