حضرت عثمان بن حنیف رضی اللہ تعالٰی عنہ سے روایت ہے کہ ایک نابینا بارگاہ مصطفٰی صلی اللہ تعالٰی علیہ وآلہ وسلم میں حاضر ہوا اور عرض کی کہ اللہ عزوجل سے دعاء فرمائیں کہ مجھے شفا (بینائی) عطا فرمائے۔ تاجدار انبیاء صلی اللہ تعالٰی علیہ وآلہ وسلم نے فرمایا، اگر تو چاہتا ہے تو تیرے لئے دعاء کرتا ہوں۔ اگر تو چاہتا ہے تو صبر کر، یہ تیرے لئے بہتر ہے۔ اس نے عرض کی کہ دعاء فرمائیے۔
حضرت عثمان بن حنیف رضی اللہ تعالٰی عنہ کہتے ہیں کہ آپ صلی اللہ تعالٰی علیہ وآلہ وسلم نے اسے اچھی طرح وضو کرنے کا حکم دیا اور فرمایا کہ یہ دعاء پڑھ۔

اَللٌٰھُمَ اِنِی اَسئَلُکَ وَاَتَوَجَہُ اِلَیک بِنَبِیِکَ مُحَمَدٍ نَبِیَ الرَحمَۃِ اِنِی تَوَجَھتُ بِکَ اِلٰی رَبِی لِیَقضِی لِی ھٰذِہِ اَللٰھُم فَشِفِعہُ فِی
(ترمذی شریف)
منقول ہے کہ انہوں نے مسجد میں جاکر یہ دعاء پڑھی، کچھ دیر نہ گزری تھی کہ آنکھیں روشن ہو گئیں۔ خیال رہے کہ یہ دعاء تھوڑے تھوڑے فرق کے ساتھ ابن ماجہ، حاکم، نسائی میں بھی موجود ہے۔ (نزہۃ المجالس۔ اول)
Customer Service (Pakistan) +92-313-99-77-999
Helpline +92–30-40-50-60-70
Customer Service (UAE) +971-5095-45517
E-Mail [email protected]
Dr. Hakeem Muhammad Irfan Skype ID alshifa.herbal

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *