Pomegranate dry seed benefits تبخیر معدہ انار دانہ ہاضمہ کی لاجواب دوا
انار دانہ در اصل انارِ ترش ہے‘ یعنی کھٹا انار‘ جہاں پاک و ہند میں یہ پیدا ہوتا ہے‘ وہاں اس کا مقامی نام واڈو‘ دڑو‘ دارو اور داری ہے۔ یہ ہمالیہ‘ شوالک کے سلسلہ ہائے کوہ اور سلسلہ کوہستان قراقرم کی وادیوں کی پیداوار ہے۔ مقامی باشندے اس کی چٹنی بناتے ہیں اور اسے ذائقے کےلئے غذا کے ساتھ کھاتے ہیں۔ پودوں پر لگے لگے یہ پھل سوکھ جاتے ہیں یا گل سڑ کر ختم ہو جاتے ہیں۔
پودے کے نیچے ان کے ڈھیر دیکھے جا سکتے ہیں جب کہ مارکیٹ یا بازار میں اناردانہ نایاب ہے۔ مصنوعی انار دانہ البتہ دستیاب ہے۔ کسی پرانے جاننے والے طبیب سے ہی اس کی خریداری ممکن ہے۔ البتہ موسم میں پشاور‘ پنڈی‘ سوات کے بازاروں اور منڈیوں میں یہ خاص خاص دکانداروں کے ہاں طلب کرنے پر دیکھا جا سکتا ہے۔ بے شک انار دانہ ہاضمہ کی ایک لا جواب دوا ہے‘ بہت سے طبی اور ویدک نسخوں میں انار دانہ جزو اعظم ہے۔ مثلاً آیورویدک کا ایک بہت مشہور نسخہ ہضم کےلئے ہے اور وید اس کے فائدوں کے بڑے قائل ہیں۔ ہاضمہ کی ان گولیوں کا ویدک نام سوادشٹ پاچک وٹی ہے۔

ان گولیوں کا نسخہ یہ ہے۔ اصلی انار دانے کا سفوف ایک کلو‘ عمدہ سندر خانی کشمش (پسی ہوئی) چینی کا سفوف‘ دونوں ایک ایک پاﺅ ‘ دھنیا خشک ‘ سفید زیر ہ بھنا ہوا‘ کالی مرچ ہر ایک کا سفوف ایک ایک چھٹانک‘ تیز پات‘ سونف‘ لاہوری نمک‘ سمندری نمک‘ سانبھر نمک‘ بڑ نمک‘ فلفل دراز‘ عقر قرحا‘ ہر ایک کا سفوف دو دو تولہ (24 گرام) جاوتری کا سفوف بارہ گرام ۔ پہلے کشمش کو خوب رگڑ کر لئی سی بنا لیں پھر باقی دوائیں ملا کر بیر کے برابر گولیاں بنا لیں( گولی کا وزن دو رتی ہونا چاہیے)ان گولیوں کو غذا کے بعد چوسنے سے منہ کا ذائقہ ٹھیک ہو جاتا ہے۔ کھانا ہضم ہوتا ہے۔ کھٹی میٹھی ڈکاروں میں فائدہ ہوتا ہے۔ تبخیر معدہ کی تو یہ اکسیری دوا ہے۔
کھانے سے نفرت ہو جانے کی شکایت میں اس کا فائدہ دیکھا جا سکتا ہے۔ ایک بڑا فائدہ ان گولیوں کا یہ مشاہدہ میں آیا کہ ان کے چوسنے سے فرحت حاصل ہوتی ہے۔ دن بھر میں ایک ایک گولی چار بار چوس سکتے ہیں۔ ہائی بلڈ پریشر کے مریض یہ گولیاں نہ چوسیں۔
Customer Service (Pakistan) +92-313-99-77-999
Helpline +92–30-40-50-60-70
Customer Service (UAE) +971-5095-45517
E-Mail info@alshifaherbal.com
Dr. Hakeem Muhammad Irfan Skype ID alshifa.herbal

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *