جنسی جوش کےاحساسات عضو تناسل میں تناؤ نہ ہونا

عضو تناسل میں تناؤ نہ ہونا یہ ہے کہ متعلقہ مَرد،جنسی ملاپ کے لئے اپنے عضو تناسل میں مطلوبہ تناؤحاصل نہ کر سکے یا اس تناؤ کوجنسی ملاپ کی تکمیل تک قائم نہ رکھ سکے۔ یہ کیفیت بڑی عمر کے مَردوں میں زیادہ عام ہے،تاہم یہ عام صورت حال کسی بھی عمر میں پیش آسکتی ہے۔یہ کوہے لیکن اگر ایسا بار بار یا مستقل طور پر ہوتا ہے تو اِس کے نتیجے میں ذہنی دباؤاور باہمی تعلقات کے مسائل پیدا ہو سکتے ہیں ۔۔یہ خیال حالیہ برسوں میں تبدیل ہوگیا ہے۔اب یہ بات معلوم ہو گئی ہے کہ عضو تناسل میں تناؤ کا نہ ہونا یا اِسے قائم نہ رکھ پانے کے مسئلے کا تعلق نفسیاتی عوامل کے بجائے جسمانی عوامل سے زیادہ ہوتا ہے اوریہ کہ بہت سے مَردوں میں 80سال کی عمر تک بھی یہ صلاحیت معمول کے مطابق ہوتی ہے۔، اس کے علاج میں ادویات سےآپریشن تک بہت سےعلاج دستیاب ہیں جن کے ذریعے مَردمعمول کی جنسی سرگرمیاں کرنے کی صلاحیت حاصل کر سکتے ہیں۔

عضو تناسل میں تناؤ نہ ہونا :جسمانی اسباب

پرانے معالجین کا خیال تھا کہ عضو تناسل میں تناؤ نہ ہونے کی بنیاد نفسیاتی عوامل ہوتے ہیں،لیکن یہ بات دُرست نہیں ۔اگرچہ خیالات اور جذبات عضو تناسل میں تناؤ پیدا کرنے میں اہم کردار ادا کرتے ہیں تاہم تناہو پیدا نہ ہونے کا سبب جسمانی بھی ہو سکتا ہے مثلأٔ صحت کا کوئی پُرانامسئلہ یا ادویات کے ذیلی اثرات۔ بہت سے عوامل کا مشترکہ اثر عضو تناسل میں تناؤ نہ ہونے کے مسائل پیدا کرتا ہے۔
اِس مسئلے کے عام اسباب

دِل کے امراض۔

ذیابیطیس۔مُٹاپا۔غذا کے ہضم ہونے اور اس کی جسم میں ترسیل کے مسائل .ہائی بلڈ پریشر. خون کی نالیوں میں رُکاوٹ ہونا

دِیگر اسباب

الکحل اور دِیگر منشّیا ت کا زیادہ استعمال .زیادہ تمباکو نوشی بعض تجویز کردہ ادویات۔

پراسٹیٹ کے سرطان کا علاج۔

ہارمونز کی بے قاعدگیاں مثلأٔ ٹیسٹوس ٹیرون کی مقدار میں کمی. .عضو تناسل کی ساخت کے اندر خرابی.توازن اور حرکت کی خرابی کا . مُدافعتی نظام کا مرکزی اعصابی نظام کو تباہ کرنا۔بعض اوقات عضو تناسل میں تناؤ نہ ہونا کسی اور مرض کی علامت ثابت ہو سکتا ہے۔. نچلے پیٹ میں کئے جانے والے آپریشن یا زخم جو حرام مغزکو متاثر کرتے ہیں

عضو تناسل میں تناؤ نہ ہونا: نفسیاتی اسباب

عضو تناسل میں تناؤ کلیےمطلوبہ جسمانی کیفیتوں کے سلسلے کو جاری کرنے میں دِماغ اہم کردار ادا کرتا ہے، مثلأٔ جنسی جوش کےاحساسات کا شروع ہونا۔ جنسی احساسات میں بہت سے عوامل خلل ڈال سکتے ہیں اور تناؤ نہ ہونے کے معاملے کو مزید خرابی سے دو چار کرسکتے ہیں

۔اِن عوامل میں درجِ ذیل اسباب شامل ہیں

تھکن۔ذہنی دباؤ۔ تشویش۔ ڈپریشن۔

اپنے ساتھی سے بہت کم بات کرنا یا اُس سے اختلافات ہونا
عضو تناسل میں تناؤ نہ ہونے کے نفسیاتی و جسمانی عوامل ایک ساتھ مِل کر کام کرتے ہیں۔مثلا ایک معمولی جسمانی مسئلہ ،جنسی ردِّعمل کی رفتار کو سُست بنادیتا ہے اور اِس کے نتیجے میں تناؤ نہ ہونے کا مسئلہ مزید شدّت اختیار کو سکتا ہے۔

Customer Service (Pakistan) +92-313-99-77-999
Helpline+92–30-40-50-60-70
Customer Service (UAE)+971-5095-45517
E-Mailinfo@alshifaherbal.com
Dr. Hakeem Muhammad Irfan Skype IDalshifa.herbal

8 thoughts on “جنسی جوش کےاحساسات

  1. Assalam 0 Alekum

    Mare umar 55 sal hae 1995 mae dil apreshan hua tha 4mah bad injuhbelaste huae kukah dil ke 2 nalia wapes band hou gae the ore abbhe band hae

    mara masla yah hae kah tanou bilkul nahe haouta hae

    Agar mare laye koue nukhsa tajves kar dae tou maher bane huoge

    Jazakalla Kheer

  2. meri umar 25 sal hai.mein yeh janna chahta hon k HUM JINSI bemari hai ya yeh qudrati cheez hai. agar bemari hai tau eska koe elaj mojod hai? agar hai to meri madad kejye meri shadi honi wali hai aur mein essi chez ka shikar hon, mard ho k aurat mein ki tarf kabhi mael nahe howa hamesh mard he mein jinsi taskeen nazar ati hai mein bauht pareshan hon meri madad kejye

  3. حکیم صاحب میں نے کم عمری میں بہت زیادہ مشت زنی کی ہے اب میری شادی کو ‏1 ہفتہ ہو گیا ہے گھر پر یہ بول کر کہ میرے دل میں درد ہے تھوڑی مہلت حاصل کی ہے مگر جماع کو میرا نہ تو دل کرتا ہے نہ ہی عضو خاص میں اتنا دم ہے کہ جماع کر سکوں، براۓ مہربانی ایک مسلمان ہونے کے ناطے کوئی حل بتادیں ورنہ خودکشی کے علاوہ میرے پاس کوئی طریقہ نہیں.

  4. me jab wozo krta ho to us k bad amsha pashab k qatree ghir jate hea
    dosra sahtani soch ane pere mani k qatree b nikal jate hea
    age 26 year

  5. meri age 22 year hai or mere sath ptoblem ye hai k mujhe hafte main 2 bar ahtlam hojata hai jiski wajha se weight b bhot kam hogya hai or gal b pichke hogae hain or ab to aksar ahtlam ka ahsas b nhi hota ye problem 2 sal se hai kya kuch ehtiati tadabir hain k is problem se bacha ja sake or iska ilaaj kya hai???
    aap k jawab ka muntazir

Leave a Reply



  • error: Content is protected !!